تازہ ترین خبریں  
 
 
  تازہ ترین مقالات  
 
 
  مقالات  
 
 
  پیوندها  
   

نیوزنور23فروری/ایک صیہونی روز نامے نےا پنی ایک رپورٹ میں نجباء مقاومتی تنظیم کے سیکریٹری جنرل شیخ اکرم الکعبی کےدورہ لبنان اورحزب‌الله رہنماوں سے ملاقات پرتبصرہ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ اسرائیل کے خلاف جنگ میں وہ حزب اللہ کے ہمراہ ہوگی۔

نیوزنور23فروری/بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کے ڈائریکٹر نےجوہری معاہدے کے حوالےسےایک بار پھر ایران کی شفاف کارکردگی کی تصدیق کی ہے۔

نیوزنور23فروری/ایمنسٹی انٹرنیشنل نے خبردار کیا ہے کہ سعودی عرب کے ولیعہد اپنے ملک کے شہریوں پر دباؤ بڑھانے اور مخالفین کو کچلنے کے لئے اصلاحات کا پرچم بلند کئے ہوئے ہیں۔

نیوزنور22فروری/اسلامی تحریک مقاومت حماس کے ترجمان نےکہا ہے کہ سلامتی کونسل کے اجلاس میں نیکی ہیلی کے خطاب سے فلسطینی قوم کے تئیں ان کی دشمنی جھلک رہی تھی۔

نیوزنور22فروری/ایک صیہونی عہدے دار نے کہا ہے کہ امریکہ میں ڈونالڈ ٹرمپ کے صدر بننے کے بعد فلسطین میں اسرائیلی ریاست کے مظالم اور توسیع پسندانہ اقدامات کے ساتھ ساتھ بیرون ملک سے یہودیوں کی آمد میں بھی اضافہ ہوگیا ہے۔

  فهرست  
   
     
 
    
اسرائیل ہیوم ؛
سعودی عرب کو اسرائیل کی ضرورت ہے/ایران کا خوف ریاض کو تل ابیب کی جھولی میں دھکیل رہا ہے

نیوزنور:ایک نشریے اسرائیل ہیوم نے لکھا ہے : سعودی عرب کو اسرائیل کی ضرورت ہے اور ایران کا خوف ریاض کو تل ابیب کی جھولی میں دھکیل دے گا ۔

استکباری دنیا صارفین۱۱۴۳ : // تفصیل

اسرائیل ہیوم ؛

سعودی عرب کو اسرائیل کی ضرورت ہے/ایران کا خوف ریاض کو تل ابیب کی جھولی میں دھکیل رہا ہے

نیوزنور:ایک نشریے اسرائیل ہیوم نے لکھا ہے : سعودی عرب کو اسرائیل کی ضرورت ہے اور ایران کا خوف ریاض کو تل ابیب کی جھولی میں دھکیل دے گا ۔

عالمی اردو خبررساں ادارے نیوزنور کی رپورٹ کے مطابق ایک نشریے "اسرائیل ہیوم" نے ایک مضمون میں جو تل ابیب یونیورسٹی کے  استاد اور تجزیہ نگار مورڈخای کڈار کے قلم سے ہے ، سعودی نشریے ایلاف کے ساتھ صہیونی حکومت کے چیف آف آرمی اسٹاف ، گاڈی آیزنکوٹ ، کے انٹرویو کا جائزہ لیا ہے اور لکھا ہے کہ اسرائیل کو سعودی عرب کے نزدیک ہونے پر رغبت نہیں دکھانی چاہیے اس لیے کہ ریاض کو تل ابیب کی ضرورت ہے ۔

اس مضمون کے شروع میں ، اس انٹرویو کے بعد اسرائیلی روزناموں کی سرخیوں کی طرف اشارہ کیا گیا  ہے : سعودی عرب کے ساتھ صلح کا آغاز ہو چکا ہے ! آخری زمانہ آ گیا ہے ! ان تمام روزناموں  پر شادی اور خوشحالی کی ایک فضا  چھائی ہوئی  تھی ۔

کڈار نے اس بات پر تاکید کرتے ہوئے کہ اسرائیلیوں کو سعودیوں کے نزدیک ہو نے کے لیے اپنی طرف سے رغبت نہیں  دکھا نا چاہیے   ، لکھا ہے : سعودیہ والوں کو ایران کی وجہ سے ہماری ضرورت ہے ، وہ یہاں تک کہ شیطان کے ساتھ بھی ہمبستر ہونے کے لیے تیار ہیں بشرطیکہ وہ ایران سے ان کی حفاظت کریں ۔

اس نے یہ بیان کرتے ہوئے کہ اسرائیل کے خلاف علاقے کے ملکوں کی ۷۰ سال کی نفرت ، پابندیاں اور تنقید باعث بنی ہیں کہ وہ ہر مسکراہٹ پر فریفتہ ہو جاتے ہیں ، لیکن اسرئیلی حکام کو چاہیے کہ سعودیوں کے ساتھ مذاکرات کے موقعے پر لاپرواہی کا مظاہرہ کریں اور انہیں مجبور کر دیں کہ وہ تل ابیب کو راضی کرنے کے لیے ان کے زیادہ مطالبات تسلیم کریں ۔

مشرقی امور کے ماہر اس صہیونی نے مزید لکھا ہے : ایران سے سعودی عرب کا خوف اور اضطراب سعودیوں کو ہماری طرف لا رہا ہے اور جو شاید پہلی بار ہم کو یہ موقعہ دے رہا ہے کہ ہم اپنے شرائط کو بیان کریں ۔ جو اس طرح ہیں : صلح کے مذاکرات صرف سعودیوں کے ساتھ ہوں اور کسی خارجی کی مداخلت نہ ہو ، قدس میں سعودی عرب اپنا سفارتخانہ کھولے ، فلسطین کے ہر علاقے میں یہودیوں کی رہائش کے حق کو سرکاری طور پر تسلیم کیا جائے ، سعودیہ ۔اسرائیل اور اسرائیل ۔فلسطین کے مابین مناقشات میں فرق رکھا جائے ، سعودی عرب وعدہ کرے کہ وہ بین الاقوامی سطح پر کہیں بھی اسرائیل کے خلاف ووٹ نہیں دے گا ، اقتصادی ،ثقافتی اور تجارتی روابط کو معمول پر لایا جائے ، اور کھیل کے میدانوں میں اسرائیل کے جھنڈے کو تسلیم کیا جائے ۔   

 


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
پیغام:  500
 
. « »
قدرت گرفته از سایت ساز سحر